Youtube earning screenshot 70

سی پی ایم یوٹیوب ورک سیکھیں اور کروڑوں کمائیں!

ساہیوال (ساہیوال نیوز لائیو – 26 اپریل 2021 – ارشدفاروق بٹ) پاکستان میں مختلف آن لائن پلیٹ فارمز سے لاکھوں لوگ ماہانہ کروڑوں روپے کما رہے ہیں جن میں یوٹیوب، فائیور، اپ ورک اور دیگر پلیٹ فارمز شامل ہیں.

یہ سب پلیٹ فارم آپ کو مقامی منڈیوں کی نسبت کئی گنا زیادہ کمانے کا موقع فراہم کرتے ہیں. اور بہت سے لوگ ان پلیٹ فارمز پر اپنی شناخت بنا چکے ہیں.

“شارٹ کٹ” لگانے کے شوقین حضرات اس شعبے میں بھی پائے جاتے ہیں جو آئے روز ان پلیٹ فارمز کو بائی پاس کر کے کروڑوں بٹورنے کے نت نئے طریقے ایجاد کر رہے ہیں. گوگل کو گوگل بنانے میں ان شارٹ کٹ حضرات کا بڑا ہاتھ ہے. اور گوگل ہمیشہ ان سے نبردآزما رہتا ہے اور شارٹ کٹ کو غیر مؤثر بنانے کے لیے ہر سال کئی بار اپنے الگورتھم کو اپڈیٹ کرتا ہے.

ماضی میں یوٹیوب اور ویب سائٹ اشتہارات پر گروپ کلکنگ بہت مقبول تھی جس سے کم وقت میں زیادہ کمائی ممکن تھی. اس ٹیکنیک کو کلک فار کلک کا نام دیا گیا اور فائرفوکس پر ہائی سی پی سی کوکیز انسٹال کر کے منظم انداز میں کلک فار کلک کے ذریعے گوگل الگورتھم کو بائی پاس کیا گیا. تاہم جلد ہی گوگل نے اس کا حل ڈھونڈ لیا.

حال ہی میں یوٹیوبرز کی زبان پر ایک ہی نام گردش کر رہا ہے اور وہ ہے “سی پی ایم ورک” ، یہ کتنا کامیاب ہوتا ہے اس کا پتہ 12 مئی تک چل جائے گا. اب تک کی حاصل شدہ معلومات کے مطابق ہائی سی پی سی ٹاپک پر ویڈیو اپ لوڈ کرنے کے بعد گوگل کروم میں آٹو ریفریش ایکسٹینشن انسٹال کی جاتی ہے. جس میں 12 سیکنڈ کا ٹائم سیٹ کیا جاتا ہے.

متعلقہ ویڈیو کو 12 ٹیبز میں چلایا جاتا ہے. جس سے سکپ ایبل ایڈز بار بار چلتے ہیں اور یوں کچھ ہی دنوں میں 1000 ڈالر سے بھی زیادہ یوٹیوب کے ڈیش بورڈ میں جمع ہو جاتے ہیں.

تاہم یہ جمع شدہ ڈالرز 12 تاریخ کو ایڈسنس میں ایڈ ہوتے ہیں یا نہیں اس کا پتہ جلد ہی چل جائے گا. کئی یوٹیوبرز کا دعوی ہے کہ وہ اس طریقے سے رقم نکلوا چکے ہیں. اگر یہ طریقہ کامیاب رہا تو کئی پاکستانی یوٹیوبرز کروڑ پتی ہو جائیں گے. دوسری صورت میں کئی یوٹیوبرز اپنے چینل کو سسپنڈ کرا بیٹھیں گے. لگے رہو.

——————————————
ہمارا یوٹیوب چینل سبسکرائب کریں.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں